Category

میلاد سے روکنا شیطان کا وار

مجلس میلاد مبارک (درحقیقت) ذکر شریف سید عالم صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم اور حضور صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم کا ذکر اللہ عزوجل کا ذکر اور ذکر الٰہی عزوجل سے بلا وجہ شرعی منع کرنا شیطان کا کام ہے ۔

(فتویٰ رضویہ، 760/9)

ایمان کا زریعہ

ہدایت تو نبی امی صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم کے ماننے پر موقوف ہے جو ان کو نہ مانے اسے ہدایت نہیں اور جب ہدایت نہیں ایمان کہاں؟

(فتویٰ رضویہ، 703/14)

میلاد کا ثبوت

ولادت اقدس حضور صاحب لولاک صلی اللہ تعالیٰ علیہ تمام نعمتوں کی اصل ہے، تو اسکے خوب بیان و اظہار کا نص قطعی قرآن سے ہمیں حکم ہوا اور بیان و اظہار مجمع میں بخوبی ہوگا، تو ضرور چاہئے کہ جس قدر ہوسکے لوگ جمع کئے جائیں اور انہیں ذکر ولادت باسعادت سنایا جائے اسی کا نام مجلس میلاد ہے۔

(فتویٰ رضویہ، 530/26)

وضو میں نیت

وضو میں نیت نہ کرنے کی عادت سے کناہ گار ہوگا، اس(وضو) میں نیت سنت موکدہ ہے۔

(فتویٰ رضویہ، 616/4)

غیبت کبیرہ گناہ

سرکار کائنات صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم کا فرمان عبرت نشان ہے :

معراج کی رات میں ایسی عورتوں کو اور مردوں کے پاس سے گزرا جو اپنی چپاتیوں کے ساتھ لٹک رہے تھے، تو میں نے پوچھا :اے جبرائیل! یہ کون لوگ ہیں؟ عرض کی:یہ منہ پر عیب لگانے والے اور پیٹھ پیچھے برائی کرنے والے ہیں اور انکے متعلق اللہ عزوجل ارشاد فرماتا ہے:

ترجمہ

خرابی ہے اسکے لئے جو لوگوں کے منہ پر عیب کرے، پیٹھ پیچھے بدی کرے۔

غیبت کبیرہ گناہ جہنم میں لے جانے والا کام ہے اس سے بچیں۔

عرس اعلحضرت رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ مبارک

امام اعلحضرت رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی ولادت پاک 10 شوال 1272 ھ بروز پیر، شریف جبکہ وصال 25 صفر 1340 ھ جمعتہ المبارک کے دن ہوا ۔اس طرح آپ نے 13 ویں صدی ہجری کے 28 سال 2 مہینے 20 دن جبکہ 14 ویں صدی کے 39 سال 1 مہینہ 25 دن پائے۔

عرس اعحضرت رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ

فرمان حضرت سیدنا کعب احبار رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ

اللہ پاک کے یہاں بندے کو جب کوئی مقام و مرتبہ حاصل ہوتا ہے تو اس پر آزمائشیں بڑھتی جاتی ہیں ۔

(حیلۃ الاولیاء 401/5)

شیطان کے وساوس

فرمان اعلحضرت رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ

جس پر شیطان کے وساوس مخفی (وسوسے پوشیدہ)  ہوں اس انسان پر اس انسان پر شر و خیر میں التباس (شبہ) ہوجاتا ہے اور شیطان اسے حسنات (بھلائیوں) سے سیسات (برائیوں) کی طرف لے جاتا ہے اور اس سے باعمل علماء ہی آگاہ ہوسکتے ہیں ۔

فتویٰ رضویہ، 685/10

گناہ کرنے سے بڑا گناہ

معصیت کی اجازت معصیت سے بڑھ کر معصیت ہے۔(یعنی گناہ کرنے کی اجازتدینا گناہ کرنے سے بڑا گناہ ہے)

(فرمان اعلحضرت رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ)

1 2 3 19